May 26, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/americanarmenianlegion.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

ترکیہ کی طرف سے برآمدی اشیاء پر پابندی: اسرائیل سیخ پا اور سخت ردعمل کا شکار

A Turkish flag flutters atop the Turkish embassy as an Israeli flag is seen nearby, in Tel Aviv, Israel. (File photo: Reuters)

اسرائیل نے کہا ہے کہ ہم بھی ترکیہ کے خلاف اقدامات کریں گے۔ ترکیہ تجارتی معاہدوں کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ اسرائیل کی طرف سے یہ بیان وزارت خارجہ نے منگل کے روز اس وقت دیا جب یہ خبر سامنے آئی کہ ترکیہ نے اسرائیل کو برآمد کی جانے والی 54 برآمدی اشیاء پر پابندی لگا دی ہے۔

اسرائیلی وزیر خارجہ کارٹز نے ترکیہ کی طرف سے تجارتی پابندیوں اور برآمدات روکنے کے اعلان کے بعد صدر رجب طیب ایروآن کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ کارٹز نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ‘ایکس’ پر کہا ‘ایردوان ترکیہ کے معاشی مفادات کو حماس کی حمایت حاصل کرنے کے لیے قربان کر رہے ہیں۔ اسرائیل تشدد کے سامنے سر نہیں جھکائے گا۔ بلکہ ترکیہ کے خلاف اسی طرح کے اقدامات کرے گا جس طرح کے ترکیہ نے کیے ہیں۔’

اسرائیلی وزرت خارجہ نے کہا ہے ‘اسرائیل ایک ایسی فہرست کی تیاری کر رہا ہے جو وسیع تر ہو گی اور جس سے اسرائیل کی درآمدی اشیاء پر پابندی لگائی جائے گی۔ اس میں سٹیل اور سیمنٹ کے علاوہ تعمیراتی اشیاء بھی شامل ہوں گی۔’

واضح رہے پچھلے 15 برسوں کے دوران اسرائیل اور ترکیہ کے تعلقات میں کافی مشکلات کا ماحول ہے۔ اگرچہ 2002 میں دونوں ملکوں نے سفارتی تعلقات کی مکمل بحالی ممکن بنا لی تھی مگر سات اکتوبر 2023 کی جنگ شروع ہونے کے ساتھ ہی تعلقات میں ایک مرتبہ پھر خرابی در آئی ہے۔

ترکیہ کے صدر ایردوآن حماس کی حمایت کرتے ہیں اور فلسطینیوں کی آزادی کے حق کو تسلیم کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی جدوجہد کو بھی جائز سمجھتے ہیں۔ اس لیے وہ حماس کو امریکہ اور مغربی ملکوں کی طرح دہشت گرد تنظیم کے طور پر نہیں دیکھتے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *